لاگ ان
Login
 ای میل
پاس ورڈ
 
Disclamier


ڈاکٹرز کی ہڑتال ، مستقل حل کی ضرورت Share
……سید شہزاد عالم……
پنجاب میں ڈاکٹروں کی ہڑتال کے دوران جاں بحق ہونے والے کس کے ہاتھوں پر اپنا لہو تلاش کریں۔ ہڑتال کیا ہے انسانیت کا جنازہ ہے ۔ زیر علاج معصوم بچے کی ڈرپ کھینچ لینا اور ماں باپ کی چیخ و پکار کو نظر انداز کر کے ہڑتال پر چلے جانا دل سوز واقعہ ہے جو مسیحائی جیسے مقدس پیشے کے منہ پر ایک طمانچہ سے کم نہیں۔ مطالبات منوانے کے لئے ہڑتال پر جانا ایک انتظامی معاملہ ہے اور مریضوں کے علاج سے انکار ایک غیر انسانی فعل ہے جس کی توقع ایک ڈاکٹر سے ہرگز نہیں کی جاسکتی۔ ڈاکٹری جیسے مقدس پیشے سے وابستہ افراد مطالبات منوانے کے لئے دیگر راستے بھی ڈھونڈ سکتے ہیں، اور اگر وہ اپنے موقف کو درست اور بر حق جانتے ہیں تو عدالت کے دروازے پر بھی دستک دے سکتے ہیں لیکن مسلسل ہڑتال پر چلے جانا اور جاں بلب مریضوں کے علاج سے انکار بہرحال ایک کریہہ جرم ہے جس کی ایک انسان دوسرے انسان سے توقع نہیں کر سکتا۔ حکومت کا غیر لچکدار رویہ اور سرد مہری بھی اپنی جگہ قابل مذمت ہے ۔ معاملات کو بگاڑنے سے بہتر ہے کہ اعلی سطح پر اس معاملے کو دیکھا جائے اور قابل قبول حل نکالا جائے۔ آئے دن ڈاکٹروں کی ہڑتال چاہے ان کے مطالبات بادی النظر میں جائز ہوں لیکن ہڑتال پر چلے جانا ہرگز قابل قبول صورتحال نہیں ہے۔ اس سے قبل یہ روش دیگر صوبوں میں بھی پھیلے حکومت کو موثر ایکشن لینا چاہئے، ڈاکٹروں کے جائز مطالبات مان کر ہڑتال کے خاتمے کی صورت نکالی جائے اور معصوم عوام کو اس کرب اور اذیت ناک صورتحال سے نجات دلائی جائے۔ پاک فوج سے ڈاکٹروں کی خدمات حاصل کرنا ایک عارضی حل ہے۔ صورتحال کو مزید بگڑنے سے بچایا جائے اور آئندہ کے لئے ایسی صورتحال کی بیخ کنی کی جائے۔
shahzad.janggroup@gmail.com  
تبصرہ کریں  تبصرے  ( 51 ) احباب کو بھیجئے
 
  ShareThis

   تبصرہ کریں  
  آپ کا نام
  ای میل ایڈریس
شھر کا نام
ملک
  تبصرہ
کوڈ ڈالیں 
  Urdu Keyboard


محمد شیر حیدری، سعودی عرب…آج اکثریت ایسے ڈاکٹروں کی ہے جو گورنٹمنٹ سروس اس لیے کرتے ہیں تاکہ مریضوں کا رخ اپنے پرائیویٹ کلینک کی طرف موڑ سکیں پنجاب حکومت کو جائز مطالبات مان لینا چاہئیں اور پرائیویٹ کلینک میں کام کرنے والوں کی برطرفی یقینی بنائی جائے۔ اکثر ڈاکٹر اسپتال نہیں جاتے بلکہ اپنے نجی کلینک میں موجود رہتے ہیں۔
 
MUHAMMAD SHER HAIDRI Posted on: Monday, July 02, 2012


طاہر خان، سعودی عرب…اچھی بات ہے لیکن آپ بتائیں احتجاج کا کیا طریقہ اختیار کیا جائے
 
طاہر خان Posted on: Monday, July 02, 2012


طاہر خان، سعودی عرب…آپ کی بات سے متفق ہونا بہت آسان ہے بشرطیکہ آپ ہی بتا دیں کہ احتجاج کا اور کیا طریقہ ہو سکتا ہے
 
طاہر خان Posted on: Monday, July 02, 2012


Dr. Mehr Wali Shah, Multan...........aapki is baat say main ikhtlaaf krun ga kiun ky jo mareez wards main hain unka ilaaj ho rha hy aur dosri baat ye ky her shaks ki khawahish hoti hy ky wo doctr bnay aur jub wo doctr nhn bun sakta uska merit itna high nhn ata to phr wo pcs css wagaira ky exams daita hy aur phr jub uski job lg jati hy to they r good,unka servce structure bhi hy unki promotion bhi time say hoti hy .but we r doctors ,hmaien servce structure kiun nhn daity ,kia hmara ye kasoor hy ky hum din raat perhty hain apni adhi zindagi means 25 saal perhny py lgaty hain sirf doctr banany ky liay aur doctr banany ky baad bhi ye halaat hn to phir aap log khud hi faisla krein .hmary liay koi eid ka din nhn din raat duty krny ky baad bhi agr awam hum say khush na ho to Allah hi faisla krny wala hy ,mairi darkhawst hy media say ky awam ko sach batein.
 
dr mehr wali shah Posted on: Monday, July 02, 2012


Sobia Amtul Basit, Bahawalpur...........jb hakomat ny last year doctors kay mutalbat maan liyay thay to un pa amal kun na kya dr. hazrat ny sub sy phlyn adlat mn aplicatin di koe hal ni nekala gya mjboor ho k hartal ki.
 
sobia amtul basit Posted on: Monday, July 02, 2012


جنید خان، کراچی…ینگ ڈاکٹر کی ہڑتال انسانیت کی تذلیل ہے، انہیں ہڑتال ختم کرکے احتجاج کا کوئی اور راستہ اختیار کرنا چاہئے یا اپنے مطالبات کے حق میں عدلیہ سے رجوع کرنا چاہئے۔
 
Junaid Khan Posted on: Monday, July 02, 2012
Prev | 1 | 2 | 3 | 4 | Next
Page 4 of 4


ایک شوہر کی چاند رات ڈائری
درزی اور عید
رمضان المبارک اور افطار پارٹیاں
سیاپا 4حلقوں کا
پولیو کی روک تھام کیسے؟
 
سیاپا 4حلقوں کا
تبصرہ کریں  تبصرے  ( 14 )
رمضان المبارک اور افطار پارٹیاں
تبصرہ کریں  تبصرے  ( 3 )
رمضان المبارک اور شمالی وزیرستان کے آئی ڈی پیز
تبصرہ کریں  تبصرے  ( 3 )
پولیو کی روک تھام کیسے؟
تبصرہ کریں  تبصرے  ( 1 )
 
 
 
 
Disclamier
 
 
Disclamier
Jang Group of Newspapers
All rights reserved. Reproduction or misrepresentation of material available on this
web site in any form is infringement of copyright and is strictly prohibited
Privacy Policy