لاگ ان
Login
 ای میل
پاس ورڈ
 
Disclamier


اب کے ہم بچھڑے تو شاید… Share
……شفیق احمد……

موسیقی کے گھرانے کلاونت سے تعلق رکھنے والے شہنشاہِ غزل مہدی حسن کے بارے میں کچھ کہنا سورج کو چراغ دکھانے کے مترادف ہے، وہ بذاتِ خود اس پہچان کے مالک تھے، جس کا احاطہ نہیں کیا جا سکتا۔ انہوں نے ملی اور فلمی نغمات کو گا کر یادگار بنایا، تاہم غزل کی گائیکی میں ان کا کوئی ثانی نہیں تھا۔ ان کے پرستاروں کا ماننا ہے کہ اگر وہ فلم میں نہ بھی گاتے تو اتنی ہی شہرت کی بلندی پر ہوتے، جتنی غزل گائیکی پرتھے۔ان کی غزلوں”گُلوں میں رنگ بھرے“ اور ”یہ دُھواں سا کہاں سے اُٹھتا ہے“ کو فلموں میں بھی شامل کیا گیا۔انہوں نے فیض احمد فیض اور احمد فراز جیسے بڑے شعراء کی شاعری کواپنی آواز کا رنگ دے کر چار چاند لگا دیے۔

ایک مرتبہ خاں صاحب، نیپال کے شاہ بریندرا کے دربار میں نغمہ سرا تھے کہ اپنے ایک گیت ’زندگی میں تو سبھی پیار کیا کرتے ہیں‘ کی ایک لائن بھول گئے تو شاہ بریندرا اپنی نشست پر کھڑے ہوگئے اور اس گیت کی وہ لائن گا کر حاضرین کو حیرت زدہ کردیا۔ اس واقعے سے مہدی حسن کی مقبولیت کا اندازہ کیا جا سکتا ہے۔

بھارت کی ممتاز لیجینڈری گلوکارہ لتا منگیشکر نے تو یہ کہہ کر انہیں خراج تحسین پیش کیا کہ ” ان کے گلے میں تو بھگوان بولتا ہے“۔ ایک اور موقع پر لتا جی نے کہا کہ وہ اپنے دن کا آغاز مہدی حسن کی غزل گا کر کرتی ہوں۔ان کے انتقال پر لتا نے اس ملال کا اظہار بھی کیا ہے کہ خان صاحب کے ساتھ کوئی گیت نہ گا نے کا انہیں بے حد افسوس ہے۔

ان جیسا گلوکار پورے برصغیر میں نہیں ہے۔ خانصاحب کے مداحوں اور پرستاروں میں دلیپ کمار، کشور کمار، جگجیت سنگھ، ہری ہرن جیسے فنکار بھی شامل ہیں جو خود اپنے اپنے شعبوں میں لیجینڈ کی حیثیت رکھتے ہیں۔

شہنشاہِ غزل علالت کے باعث اپنی عمرکے آخری چند برس میں کچھ نہیں گا پائے، تاہم انہوں نے جو کچھ گا دیا وہ صدیوں کے لیے کافی ہے اور ہر آنے والے گلوکارکے لیے مشعلِ راہ رہے گا۔

ایک اندازے کے مطابق مہدی حسن نے چون ہزار سے زائد فلمی، غیر فلمی گیت اور غزلیں گائیں اوراپنے وقت کے عظیم موسیقاروں کے ساتھ کام کیا جن میں استاد نیاز حسین شامی، پنڈت غلام قادر (برادر مہدی حسن) ، ماسٹر عنایت حسین، خواجہ خورشید انور، رشید عطرے، نثار بزمی اور محسن رضا شامل ہیں۔

مہدی حسن کے انتقال سے پاکستان میں غزل گائیکی کا ایک باب ختم ہوگیا، دنیا بھر میں اپنے فن سے داد پانے والے گلوکار نے اپنے آخری ایام بستر علالت پر گزارے اور طویل علالت کے بعد کراچی میں انتقال کر گئے۔  
تبصرہ کریں  تبصرے  ( 50 ) احباب کو بھیجئے
 
  ShareThis

   تبصرہ کریں  
  آپ کا نام
  ای میل ایڈریس
شھر کا نام
ملک
  تبصرہ
کوڈ ڈالیں 
  Urdu Keyboard


عشرت، کراچی…مہدی حسن ہمیشہ سے ہی میرے پسندیدہ گلوکار رہے ہیں۔
 
ishrat Posted on: Monday, June 25, 2012


Syed Zafar Ali, Karachi............Hindustan ki maruf gulkar lata mungeshkar ka kehna hai k wo mehdi hassan ko apna ustad manti the--------
 
syed zafar ali Posted on: Monday, June 25, 2012


Abbas Malik, Dhaka............Mehdi Hasan kay bangla Songs bhi la javab thay.jo yad rakhay jain gay.
 
Abbas Malik Posted on: Sunday, June 24, 2012


Shabbir Bajwah, Narowal...........mehdi hasan ki wafat sy pakistan aik azeem gulukaar sy mehroom ho gaya.
 
shabbir bajwah narowal Posted on: Saturday, June 23, 2012


محمد صادق رمضان، سعودی عرب…مہدی حسن برصغیر کے ایک عظیم گلوکار تھے، ان کا کوئی ثانی نہیں، اللہ انہیں جنت الفردوس میں جگہ عطا فرمائے، آمین۔
 
Muhammad Sadiq Ramzan Posted on: Saturday, June 23, 2012


حسین، گجرات…مہدی حسن عظیم گلوگار تھے۔
 
Hassan Posted on: Friday, June 22, 2012


Raja Hassan, Islamabad...........Allah in ko apni jawary rahmat main jaga ata farmaye, Ameen.
 
Raja Hassan Posted on: Friday, June 22, 2012


گل شاہ زر خان، بنوں…میں روزآنہ مہدی حسن صاحب کی غزلیں سنتا ہوں۔
 
gul shahzar khan Posted on: Thursday, June 21, 2012


طاہر، بحرین… مہدی حسن عظیم گلوکار تھے، اللہ ان کی مغفرت فرمائے۔ آمین
 
tahir Posted on: Thursday, June 21, 2012


Abid Hussain, Karachi..........allha ap ki magfirat karay ap ki ghazlay or ganay bohot sunay hay or sunnt ho ap ki awaz may haqeeat may dard tha muhay dukh hay kay ap kay liya hamari goverment nay kuch nahi kia.
 
abid hussain Posted on: Thursday, June 21, 2012


شکیل خان، امریکا…زمیں کھا گئ آسمان کیسے کیسے.
 
شکیل خان Posted on: Thursday, June 21, 2012


سلیم ستی، جنوبی افریقا…مہدی حسن عظیم گلوکار تھے، اللہ انہیں جنت الفردوس میں جگہ دے، آمین
 
saleem bhatti Posted on: Wednesday, June 20, 2012


آصف، امریکا…مہدی حسن تان سین کے بعد عظیم گلوکار تھے، انہیں بھی تان سین کی طرح ہمیشہ یاد رکھا جائے گا۔
 
Asif Posted on: Wednesday, June 20, 2012


Akbar Ali, Sudan............Allah Pak Mehdi Hassan Sahib Ko Jaanat-ul-firdaus mein jaga dey, AAmeen
 
Akbar Ali Posted on: Tuesday, June 19, 2012


مظفر خان جدون ,ہری پور..............استاد مہدی حسن موسیقی کے شہنشاہ تھے۔۔۔۔۔ اپ سُر کے دیوتا تھے۔ اوراپنی شاہکار غزلوں کی صورت میں ایسا خزانہ چھوڑ گئے ہیں جو موسیقی سیکھنے والوں کیلئیے بے بہا خزانہ ہے۔۔۔۔۔ اللہ تعالیٰ سے دعا ہے کہ مرحوم کی مغفرت فرمائے اور اپنی جوارِ رحمت میں جگہ دے ۔۔۔ آمین
 
مظفر خان جدون Posted on: Tuesday, June 19, 2012
Prev | 1 | 2 | 3 | 4 | Next
Page 1 of 4


رمضان المبارک اور افطار پارٹیاں
سیاپا 4حلقوں کا
پولیو کی روک تھام کیسے؟
رمضان المبارک اور شمالی وزیرستان کے آئی ڈی پیز
انسداد منشیات کا عالمی دن
 
سیاپا 4حلقوں کا
تبصرہ کریں  تبصرے  ( 14 )
رمضان المبارک اور شمالی وزیرستان کے آئی ڈی پیز
تبصرہ کریں  تبصرے  ( 3 )
پولیو کی روک تھام کیسے؟
تبصرہ کریں  تبصرے  ( 1 )
انسداد منشیات کا عالمی دن
تبصرہ کریں  تبصرے  ( 1 )
 
 
 
 
Disclamier
 
 
Disclamier
Jang Group of Newspapers
All rights reserved. Reproduction or misrepresentation of material available on this
web site in any form is infringement of copyright and is strictly prohibited
Privacy Policy