لاگ ان
Login
 ای میل
پاس ورڈ
 
Disclamier


پاکستان کرکٹ کی نئی تاریخ رقم ہوگئی Share
.......سید شہزاد عالم........
پاکستان کرکٹ ٹیم نے انگلینڈ کی ٹیم کو تیسرے ٹیسٹ میچ میں شکست سے نہ صرف ہمکنار کیا بلکہ وائٹ واش کرکے ایک نئی تاریخ بھی رقم کردی اور یہ کارنامہ انجام دینے والی پہلی ایشیائی ٹیم بن گئی۔ متحدہ عرب امارات آنے سے قبل انگلینڈ نے ایسے انجام کا تصور بھی نہیں کیا ہوگا۔ پوری سیریز میں انگلش کھلاڑی پاکستانی باؤلنگ اٹیک خصوصاً اسپنرز کے آگے بے بس دکھائی دیئے۔ کپتان مصباح اور دیگر کھلاڑیوں کے نزدیک اس فقیدا لمثال کامیابی کا سبب کھلاڑیوں کا ایک یونٹ ہو کر کھیلنا اور ٹیم انتظامیہ کی بھرپور محنت ہے۔ عبوری ہیڈ کوچ محسن حسن خان کی کوششوں کا ذکر نہ کرنا زیادتی ہوگی۔ پاکستان کرکٹ کی تاریخ میں ایسا شاید پہلی بار ہوا ہے کہ تین سیریز جیتنے کے باوجود کوچ اور کپتان کے درمیان ہم آہنگی برقرار ہے اور دونوں ایک دوسرے کو جیت کا کریڈٹ دے رہے ہیں۔ جیت کے کریڈٹ میں سلیکشن کمیٹی کو بھی شامل کرنا چاہیے کیونکہ اگر ٹیم ہارتی ہے تو سارا نزلہ سلیکشن کمیٹی پر ہی گرتا ہے۔ پاکستان کرکٹ بورڈ جیت کے کریڈٹ میں محسن خان کو شامل تو کرتا ہے لیکن ٹیم کی مزید گرومنگ کے لیے ڈیواٹمور کو بھی کوچ کی حیثیت سے ضروری خیال کرتا ہے جن کے بارے خبریں ہیں کہ وہ بیس فروری کو لاہور آکر معاہدے پر دستخط کرنے والے ہیں۔ ظاہر ہے جو کرکٹ بورڈ چاہے گا وہی ہوگا لیکن بورڈ کو محسن حسن خان کے ساتھ ناانصافی ہرگز نہیں کرنی چاہئے اور بورڈ میں ان کے شایان شان کوئی ذمہ داری ضرور دینی چاہئے اگر محسن خان راضی ہوں۔

سیریز شاندار طریقے سے جیت تو گئے ہیں اور قوم اس جیت کا جشن منا رہی ہے لیکن ہمیشہ کی طرح کہیں گے کہ ابھی وہ منزل بہت دور ہے جس کا خواب سب دیکھ رہے ہیں یعنی ٹیسٹ اور ون ڈے میں پہلی پوزیشن حاصل کرنا۔ فیلڈنگ کا معیار بہت بلند کرنا ہوگا۔ کیچ گرانے کی عادت ترک کرنی ہوگی اور بیٹنگ لائن میں گہرائی لانے کے لئے ایک آل راؤنڈر تیار کرنا ہوگا جیسا کہ ماضی میں عمران خان اور وسیم اکرم یہ کردار ادا کر چکے ہیں ، مزید یہ کہ وکٹ کیپر ایسا ہو جو وکٹ کیپنگ اور بیٹنگ دونوں میں مہارت رکھتا ہو جیسا کہ ماضی میں تسلیم عارف، معین خان اور راشد لطیف ہوتے تھے۔ فاسٹ باؤلنگ میں عمر گل کے ساتھ کوئی دوسرا باؤلر باقاعدگی سے نہیں کھیل رہا ہے اس طرف بھی دھیان دینا ہو گا کیونکہ ہر قسم کی وکٹوں پر اسپنرز میچ نہیں جیتا سکتے ہیں۔ باؤنسی اور سوئنگ وکٹوں پر بیٹسمینوں کو خوب پریکٹس کرانی ہوگی اور مختلف قسم کی وکٹوں پر ان کا فٹ ورک ، تیکنیک اور ٹائمنگ پر بھرپور توجہ دینی ہو گی۔
آخر میں ایک بار پھر پاکستانی کرکٹ ٹیم کو بھرپور شاباش اور یہی دعا کہ۔۔ہمیشہ۔۔ جیت کے جیو!!!  
تبصرہ کریں  تبصرے  ( 59 ) احباب کو بھیجئے
 
  ShareThis

   تبصرہ کریں  
  آپ کا نام
  ای میل ایڈریس
شھر کا نام
ملک
  تبصرہ
کوڈ ڈالیں 
  Urdu Keyboard


علی مرتضیٰ، گوجرہ…محسن خان ٹیکنیکل کوچ نہیں ہیں۔
 
ali murtaza Posted on: Thursday, February 09, 2012


طاہر ناز انصاری، فرانس…بہت خوب پاکستان ٹیم، پوری قوم کا سر فخر سے بلند ہوگیا۔
 
TAHIR NAZ ANSARI Posted on: Wednesday, February 08, 2012


سہیل، سانتیاگو…پوری ٹیم کو مبارکباد، دل خوش کردیا۔
 
sohail Posted on: Wednesday, February 08, 2012


نعیم عباس رانجھا، اومان…پاکستان زندہ باد، شاباش پاکستان ٹیم
 
NAEEM ABBAS RANJHA Posted on: Wednesday, February 08, 2012


عمر سلیم، برازیل…کیا شاندار کامیابی ہے، دنیا بھرمیں موجود تمام پاکستانیوں کو اس کامیابی پر خوشی ہے۔
 
umer saleem Posted on: Wednesday, February 08, 2012


اشعر، فیصل آباد…پاکستان ٹیم کو اب ہرانا بہت مشکل ہے، اب تو آسٹریلیا بھی پاکستان کے ساتھ کھیلنے سے ڈرے گا، مجھے امید ہے پاکستان ٹیم کامیابی کے اس سلسلے کو برقرار رکھے گی۔
 
asher Posted on: Wednesday, February 08, 2012


عبدالشکور، ڈی جی خان…پاکستان ٹیم کو مبارکباد، عمران نذیر کو بھی ٹیم میں شامل کیا جائے۔
 
abdul shakoor Posted on: Wednesday, February 08, 2012


عبدالخالق، کراچی…اس کامیابی پر میں پاکستان ٹیم کو مبارکباد پیش کرتا ہوں اور امید کرتاہوں کہ ٹی ٹوئنٹی اور ون ڈے میں بھی بہتر کارکردگی پیش کرے گی۔
 
abdul khalique Posted on: Wednesday, February 08, 2012


مہر شفیق، بحرین…اگر پاکستان ٹیم میں کرپٹ پلیئر نہیں ہوں گے تو ایسے ہی اچھی کارکردگی ہوگی۔
 
mehar shafiq Posted on: Wednesday, February 08, 2012


سرور، کراچی…اللہ کا لاکھ لاکھ شکر ہے کہ اس نے ہمیں تاریخی فتخ نصیب کی، ٹیم کے ہر ایک کھلاڑی کو شاباش، کامران اکمل اور انور علی کو ون ڈے اسکواڈ میں شامل کرنا چاہئے تھا، عمران فرحت کی جگہ ناصر جمشید زیادہ مفید ثابت ہوسکتا تھا۔
 
Sarwar Posted on: Wednesday, February 08, 2012


ذاکر علی، سعودی عرب…پاکستان کی جیت پر بڑی خوشی ہے لیکن پاکستان کے کرکٹ گراؤنڈ بھی بحال ہونے چاہئیں اور عامر کو ٹیم میں لیا جائے۔
 
ZAKIR ALI Posted on: Wednesday, February 08, 2012


نوید حیدر، سیالکوٹ…پاکستان کی فتخ ناقابل فراموش ہے، لیکن ہمیں فیلڈنگ اور بیٹنگ کے شعبے میں اپنی خامیوں پر بھی نظر رکھنی چاہئے۔
 
Naveed Haider Posted on: Wednesday, February 08, 2012


غلام مصطفیٰ، سعودی عرب…پاکستان ٹیم کو مبارکباد، اس جیت پر پوری قوم خوش ہے، اب بورڈ کو چاہئے کہ جلد از جلد عمرگل کا ساتھ دینے کیلئے کوئی اچھا بالر تلاش کرے۔
 
ghulam mustafa Posted on: Tuesday, February 07, 2012


فہد، کراچی…پوری ٹیم کو میری طرف سے بہت بہت مبارکباد، مجھے پاکستان کی جیت پر بہت خوشی ہے، جس طرح پاکستان ٹیم نے سیریز میں کامیابی حاصل کی ہے اس پتا چلتا ہے کہ ٹیم نے بہت محنت کی ہے۔
 
fahad Posted on: Tuesday, February 07, 2012


فاروق، امریکا…پاکستان ٹیم کی کامیابی کا سہرا محمد آصف، سلمان بٹ اور محمد عامر کے سر جاتا ہے، کیونکہ ٹیم کے موجودہ کھلاڑیوں نے کسی بھی غلط کام سے بچنے کیلئے ان سے سبق حاصل کیا اور پوری توجہ صرف اور صرف کھیل پر دی۔ پاکستان ٹیم ہمیشہ سے دنیا کی مضبوط ٹیم ہے۔
 
FAROOQ Posted on: Tuesday, February 07, 2012
Prev | 1 | 2 | 3 | 4 | Next
Page 3 of 4


بچوں کو جنسی تشدد سے بچائیں
کپتانی کا تاج آفریدی کے سر پر!
سعید اجمل کی معطلی اور سوشل میڈیا
تانيا تحريکی کی دہائی
چینی صدر کا دورہ ملتوی ،سوشل میڈیا پر ردعمل
 
تانيا تحريکی کی دہائی
تبصرہ کریں  تبصرے  ( 55 )
چینی صدر کا دورہ ملتوی ،سوشل میڈیا پر ردعمل
تبصرہ کریں  تبصرے  ( 37 )
عمران خان،اب آپ کو پلان ’بی‘ کا انتظار ہے؟
تبصرہ کریں  تبصرے  ( 36 )
انقلابی مون سون
تبصرہ کریں  تبصرے  ( 30 )
لفظوں کے انتخاب نے رسوا کیا تجھے
تبصرہ کریں  تبصرے  ( 27 )
 
 
 
 
Disclamier
 
 
Disclamier
Jang Group of Newspapers
All rights reserved. Reproduction or misrepresentation of material available on this
web site in any form is infringement of copyright and is strictly prohibited
Privacy Policy