لاگ ان
Login
 ای میل
پاس ورڈ
 
Disclamier


Disclamier
مقابلے کے امتحانات اردو میں کیوں نہیں؟
......سیدعارف مصطفیٰ......
خدا شاید بلکہ واقعی ہماری قوم سے سخت ناراض ہے کہ اس نے ہمیں زیادہ تر رہنما ایسےفراہم کردیئے ہیں کہ جنہیں قومی و ملی معاملات کا صحیح ادراک ہے اور نہ ہی انکے مؤثر حل کا کوئی شعور،،، میں پھر اپنی پرانی بات دوہرانے پہ مجبور ہوں کہ یہاں سیاستدان تو بیشمار ہیں لیکن مدبر کوئی بھی نہیں، بہت ہی چھوٹے اور محدود ذہن کے لوگوں کے ہاتھوں میں قوم کی تقدیر جانے کب سے کھلونا بنی ہوئی ہے ،،، مجھے کبھی کبھی تو یقین نہیں آتا کہ تبدیلی کا نعرہ لگانے والے اور قومی وقار کی بحالی کے علمبردار عمران خان نے عملاً اردو دشمن کا کردار اختیار کرلیا ہے اور انکی ہدایات کی روشنی میں صوبہ کے پی کے کی حکومت نے صوبائی اسکولوں سے اردو میڈیم کو فنا کرکے ہر سطح پہ انگلش میڈیم نافذ کرنے کی ٹھان لی ہے،،،، اس سے بھی زیادہ افسوسناک بات انکی حلیف جماعت اسلامی کا اس معاملے میں اظہار معذوری ہے ،،، مجھے اس دینی و قومی دردمندی سے سرشار جماعت سے اس درجہ سفاک بے نیازی و لاچاری کی توقع ہرگز نہ تھی،،، مجھے یہاں یہ کہتے ہوئے بہت دکھ ہورہا ہے کہ اب جماعت پورے خلوص اور دردمندی کے باوجود کسی بڑے وژن سے یکسر تہی دامن ہوچلی ہے،،،اس سے کہیں زیادہ بہتر کردار تو نواز لیگ کا ہے کہ جسے عدالت عظمیٰ کے سامنے کم ازکم شرمندگی کی توفیق تو نصیب ہوئی ہے۔

بہت سے مفاد پرست لوگوں نے انقلاب کی علامت عمران خان کو اپنی ناپاک سوچ کا یرغمال بنا لیا ہے اور اس انگلش میڈیم گروپ نے اپنے مفادات کے تحفظ کیلئے تحریک انصاف کو اپنی ڈھال بنالیا ہے اور اب تحریک انصاف خورشید محمود قصوری کے بیکن ہاؤس اسکول سسٹم کی محافظ بنکر سامنے آگئی ہے ۔۔۔ جبکہ اس وقت سپریم کورٹ میں جو اردو کی جنگ لڑی جارہی ہے وہ دراصل پوری قوم کے وقار کی جنگ ہے ،، ایک ایسی جنگ کہ جو اگر جیت لی گئی تو اس سے ایک نہایت بڑا اور حیرتناک انقلاب جنم لے گا،،، اور وہ انقلاب یوں برپا ہوسکےگا کہ طبقاتی تقسیم کے روایتی تصورات کو سخت اور کاری ضرب لگے گی کونکہ پہلے ہی مرحلے میں سی ایس ایس کے امتحانات اردو میں منعقد کروانے کا کام شروع ہوجائےگا اورپھر نئے ڈپٹی کمشنرز اور اعلیٰ عہدوں کیلئے منتخب ہونے والے لوگ وہ ہونگے کہ جو منہ تیڑھا کرکے انگریزی میں جگالی کرنے کی واحد اہلیت کے بجائے قوم کی ٹیڑھی تقدیر کو سیدھا کرنے کی زبردست لیاقت رکھتے ہونگے،،، اصل انقلاب ہی وہ ہوگا کہ جب محکوم طبقوں میں سے بھی حاکم ابھرسکیںگے،، یعنی وہ لوگ جو واقعی عام عوام میں سے ہونگے اور عوام کے حقیقی دکھوں اور مصائب کی نوعیت و شدت کو جانتے اور سمجھتے ہونگے۔۔۔ لہٰذا مناسب تو یہی ہے کہ عدلیہ کی طرف دیکھنے کے بجائے خود وفاقی و صوبائی حکومتیں اپنے اپنے دائرہء اختیار میں مقابلے کے امتحانات کو اردو میں منعقد کرنے کا اعلان و اہتمام کرڈالیں ورنہ عدلیہ اس پہ حکمنامہ جاری کردے۔

اگر یہ انقلابی قدم اٹھ گیا تو اس سے یقیناً نہ صرف طبقاتی نظام تعلیم کو ختم کرنے میں بڑی مدد ملے گی بلکہ قوم اہل فرنگ کی ذہنی غلامی سے نجات پاکر آزادی کی حقیقی مسرتوں سے ہمکنار ہوگی اور باوقار قوموں کی اس برادری کا حصہ بن سکے گی کہ جہاں افراد کی ذہنی توانائیاں اپنے بود و باش اپنے تمدن اور اپنی زبان کے سہارے ہی پروان چڑھتی ہیں۔  
تبصرہ کریں  تبصرے  ( 0 ) احباب کو بھیجئے
دِس ٹائم ٹو افریقہ ۔۔۔۔؟
شدید گرمی کی لہر۔ عذاب یا امتحان؟
انسدادمنشیات اور ہماری ذمہ داریاں
سن اسٹروک اور احتیاطی تدابیر
سائبر کرائم، انسانیت کیخلاف سنگین جرائم
 
انصاف ہی تحریک انصاف میں لاچار
تبصرہ کریں  تبصرے  ( 12 )
قصہ ایک معصوم کبوتر کا‎
تبصرہ کریں  تبصرے  ( 8 )
بھارتی فوج نے مودی کو’ماموں‘بنایا؟
تبصرہ کریں  تبصرے  ( 8 )
ٹریفک حادثات کا سبب صرف ایک ہی ہے؟
تبصرہ کریں  تبصرے  ( 7 )
آپریشن ضرب عضب کا ایک سال
تبصرہ کریں  تبصرے  ( 7 )
 
 
 
 
Disclamier
 
 
Disclamier
  دِس ٹائم ٹو افریقہ ۔۔۔۔؟   
.....محمد فرقان بھٹی......
کہتے ہیں ہر انسان کے اچھے دن کبھی نہ کبھی آتے ہیں اور اگر کچھ انسان اکٹھے ہو کر محنت کرنا شروع کردیں تو ان کے اچھے دن کیوں نہ آئیں ۔نیوزی لینڈ ، زمبابوے ، ویسٹ اینڈیز ، پاکستان اور اب بھارت پانچ ٹیسٹ پلیئنگ نیشن کرکٹ
مکمل بلاگ  
تبصرہ کریں  تبصرے  (0)

 

  شدید گرمی کی لہر۔ عذاب یا امتحان؟   
..... فرخ نور قریشی......
بڑی حیرانگی کی بات ہے، جب بھی کبھی اس ملک میں طوفان آئے، سیلاب آئے، قحط آئے۔۔۔ہم سب کا دھیان پہلے اس بات پر گیا کہ یہ ہمارے اعمال کی سزا ہے اور خدا کی طرف سے عذاب ہے۔ ہمارے ملک کے دیہی علاقوں کی تو بات
مکمل بلاگ  
تبصرہ کریں  تبصرے  (5)

 

  انسدادمنشیات اور ہماری ذمہ داریاں   
...... جویریہ صدیق......‎
26 جون کو انسداد منشیات اور غیر قانونی اسمگلنگ کے خلاف عالمی دن منایا جاتا ہے۔اس دن کو منانے کا مقصد منشیات کے انسانی زندگی پر مضر اثرات کے بارے میں آگاہی دینا ہے۔دنیا بھر میں کروڑوں افراد منشیات کے عادی ہیں،ہیروئن، شراب، حشیش ،افیون ،مورفن، گانجا ،بھنگ
مکمل بلاگ  
تبصرہ کریں  تبصرے  (3)

 

Jang Group of Newspapers
All rights reserved. Reproduction or misrepresentation of material available on this
web site in any form is infringement of copyright and is strictly prohibited
Privacy Policy