لاگ ان
Login
 ای میل
پاس ورڈ
 
Disclamier


ناچ بھی جانے، آنگن بھی سیدھا Share
  Posted On Wednesday, August 08, 2012
  ……سید شہزاد عالم……
آج کل امریکی وزیر خارجہ ہلیر ی کلنٹن افریقہ کے سات ممالک کے دورے پر ہیں۔ ہلیری کلنٹن نے ملاوی کے دورے میں روایتی لباس پہن کررقص کیاجس میں سب ہی ان کے ساتھ جھوم اٹھے تھے۔پھر اس کے بعد جنوبی افریقہ میں بھی رقص کا شاندار مظاہرہ کیا اور عشائیے کی محفل میں موجود ہر کوئی ان کا ساتھ دینے پر مجبور ہوگیا۔ہیلری کلنٹن نے موسیقی کی دھن پرخوب جم کر ڈانس کیاجسے دیکھ کر عشائیے میں موجود دیگر لوگوں کو بھی جوش آیا اور وہ بھی امریکی وزیر خارجہ کا ساتھ دینے کے لیے میدان میں اتر آئے۔ ابھی تک یہ واضح نہیں کہ ہلیری کلنٹن کو افریقہ کے دورے میں ایسی کون سی خوشیاں مل رہی ہیں کہ وہ ناچنے پرمجبور ہیں۔ اس قبل وہ بحیثیت سیکریٹری آف اسٹیٹ کئی ممالک کے کامیاب دورے کر چکی ہیں لیکن وہاں ان کو ناچتے نہیں دیکھا، ہاں البتہ موجودہ امریکی صدر اور ان کی خاتون اول نے جب بھارت کا دورہ کیا تو انہیں وہاں ڈانس کرتے ضرور دیکھا تھا۔ ہو سکتا ہے امریکہ کے خلائی مشن نے مریخ میں کوئی خزانہ دریافت کر لیا ہو جس کی خوشی چھپائے نہیں چھپ رہی ہو یا پھر سوڈان، تیونس، مصر، لیبیا کے بعد اب شام میں کوئی بڑی کامیابی نصیب ہونے والی ہو، جس کا پیشگی جشن منا رہی ہوں۔ ان ممالک میں امریکہ اپنے عالمی حریفوں کا پتہ کاٹ چکاہے اور سیاسی، فوجی اور اقتصادی پہلوؤں سے کامیابیاں حاصل کررہا ہے۔ یہ بھی تو ہو سکتا ہے کہ مڈل ایسٹ میں امریکی پلان کامیابی سے آگے بڑھ رہا ہو اور کئی حریف اب نئے حلیف بن کران کو میسر آگئے ہوں جو پرانے حلیفوں کا صفایا کرنے اور نئے حلیفوں کو بر سر اقتدار لانے میں ان کے مددگار بن رہے ہوں۔ہو سکتا ہے کہ انہیں اس بات کی بے حد خوشی ہو کہ اب کسی ملک کو سیدھا کر نے کے لئے امریکہ کو اپنی فوجیں نہیں بھیجنا پڑے گی بلکہ اس ملک میں کئی طرح کے باغی بکثرت مل جائیں گے جو ان سے مال لے کر خوب تن من دھن سے خدمات انجام دیں گے۔ بہر حال ان کی خوشی اور مستی بتا رہی ہے کہ امریکہ کا وقت اچھا چل رہا ہے۔ ہیلری کلنٹن ایک سپر پاور کی طاقتور ااہلکار ہیں۔ صرف امریکہ میں ہی نہیں بلکہ کئی ممالک کے سربراہوں کو بھی وہ انگلیوں پر نچاتی ہونگیں ، اور اب دنیا کو یہ بتانا چاہتی ہوں کہ جب وہ خود اتنا اچھا ناچ سکتی ہیں تو نچانے میں انہیں کتنی مہارت ہو گی۔ ان کی خوش قسمتی ہے کہ جہاں ان کو ناچ آتا ہے وہاں ان کو آنگن بھی سیدھا ہی ملتا ہے، البتہ دنیا میں ابھی کئی ممالک ایسے باقی ہیں جہاں کا آنگن ان کے لئے ابھی تک ٹیڑھا ہے اور ناچنا مشکل ہے۔
shahzad.janggroup@gmail.com
 
تبصرہ کریں     ا حباب کو بھیجئے  | تبصرے  (35)     

   تبصرہ کریں  
  آپ کا نام
  ای میل ایڈریس
شھر کا نام
ملک
  تبصرہ
کوڈ ڈالیں 
  Urdu Keyboard

Irfan, Karachi.............Iran ko kamyad confrence kerne per mubarakbab.
 
irfan Posted on: Thursday, September 06, 2012

M. Asif Faisal............G arif bhai mujhy apki bat se pora aetafaq he INSHA ALLAH aik din america pori dunia k samny zaror nachy ga
 
M Asif faisal Posted on: Wednesday, September 05, 2012

Arif, Madinah...........Inshallah America aik din aisa nachay ga sari dunia dekhe ge or wo din door nahin hai.
 
Arif Posted on: Tuesday, September 04, 2012

Muhammad Sameer, Tank, Paksitan.............bahot khob .
 
muhammed sameer Posted on: Thursday, August 30, 2012

Hammad Khan, Karachi..........pakistan ki bd-qismati hai or america ki khush qismati hai k pakistan ko ab tk achy or mukhlis hukamran mily nahi hai joon hi pakistan ko koi dilair leader mila america ko pata chal jaaega.
 
hammadkhan Posted on: Wednesday, August 29, 2012

Zahid, Mansehra............yeh aik bar nach kar oron ko hamesha bar bar nachatay hain.
 
zahid Posted on: Wednesday, August 29, 2012

Iqra Mahmood, Multan...........in ka kaam hi nachna aur nachaana hay.
 
iqra mahmood Posted on: Tuesday, August 28, 2012

Azhar Ali, Padidan Sindh............in ka kam hi yehi hy doosron ko nachana jahan in ka mafad hota hy ye wahan ke public ko har tarha ki khushi dena chahte hen aur jab un ka dil jeet lete hen to phir wo apne asal maqsad ki taraf lot'te hen.
 
Azhar Ali Posted on: Monday, August 27, 2012

SHAHID NAZIR, LAHORE.........HAR INSAN KO ZINDGI ENJOY KARNE KA HAQ HA PAR KASI KI KHUSHIY CHEN KE NHI.
 
SHAHID NAZIR Posted on: Monday, August 27, 2012

Imran Khan, Islamabad.........Bhut kuch kahi an kahi keh gay aap chand lafzou me, BHUT KHOOB
 
Imran Khan Posted on: Monday, August 27, 2012

اکرام، ملتان…اللہ ہم پر رحم کرے، آمین
 
ikram Posted on: Monday, August 27, 2012

Sadia, Gujranwala...........unn ka toh kaam hai apnay ashaaron pe nachaana lekin naachnay waalay b kam aqal aur bhudu hain wo apnay mufadaat k liay sochtay hain aur jo uun k ashaaron pe naachtay hain wo b uun k mufaadaat ka he sochtay hain.
 
sadia Posted on: Saturday, August 25, 2012

Mohammad Jawed, Karachi.........kabhi khatoon awwal theen jab shayad ye moqa na mila ho ....... baat ya ha wo apni awam ko zinda rakhne k liye dunia par sazishoon or taqat k zariye resources par qabza kar rahe hn lekin oosne Roos k anjam se sabaq nahen seekha akhir zulm phir zulm h hud se barhta h to mit jata ha Qudrat ka nizam to yahee he ha or ye unko fatah karta ha jo khud apnay dushman hn j se hum.
 
Mohammad Jawed Posted on: Saturday, August 25, 2012

Rahat, Lahore..........In logon ko apnay super power honay par fakhar hai, jis ko chahain nacha saktay hain aur apni kamyabi k jashan main khud nach bhi saktay hain. Hamain un par tanqeed karnay k bajaye khud ko establish karna chahiye ta k hum bhi khushi mana sakain.
 
RAHAT Posted on: Saturday, August 25, 2012

Hammad Ahmed, Karachi............ye log kabhi nahin sudhren ge or na hi sudhar sakte hain.
 
Hammad Ahmed Posted on: Monday, August 20, 2012
Prev | 1 | 2 | 3 | Next
Page 1 of 3


صوبائی اسمبلیوں کی پہلے سال کی کارکردگی
بچوں کو جنسی تشدد سے بچائیں
کپتانی کا تاج آفریدی کے سر پر!
سعید اجمل کی معطلی اور سوشل میڈیا
تانيا تحريکی کی دہائی
 
عمران خان،اب آپ کو پلان ’بی‘ کا انتظار ہے؟
تبصرہ کریں  تبصرے  ( 64 )
تانيا تحريکی کی دہائی
تبصرہ کریں  تبصرے  ( 56 )
چینی صدر کا دورہ ملتوی ،سوشل میڈیا پر ردعمل
تبصرہ کریں  تبصرے  ( 38 )
بچوں کو جنسی تشدد سے بچائیں
تبصرہ کریں  تبصرے  ( 31 )
کپتانی کا تاج آفریدی کے سر پر!
تبصرہ کریں  تبصرے  ( 28 )
 
 
 
 
Disclamier
 
 
Disclamier
Jang Group of Newspapers
All rights reserved. Reproduction or misrepresentation of material available on this
web site in any form is infringement of copyright and is strictly prohibited
Privacy Policy