لاگ ان
Login
 ای میل
پاس ورڈ
 
Disclamier


رمضان المبارک میں منافع خوری عروج پر! Share
  Posted On Monday, July 23, 2012
  ……سید شہزاد عالم……
رمضان المبارک کی آمد کے ساتھ ہی مہنگائی کا طوفان برپا ہوگیا ہے جس کے سامنے غریب عوام بے بس و لاچارنظر آ رہی ہے ۔ بازاروں اور مارکیٹوں میں منافع خوروں کا راج قائم ہے جو کھلم کھلا سرکاری احکامات کا مذاق اڑاتے نظر آتے ہیں۔ پھل اور سبزی فروش اس بات کا رونا روتے ہیں کہ ایک تو انہیں منڈی سے مال دگنے ریٹ پر مل رہا ہے اور دوسری طرف ہر طرح کے بھتہ خوروں کو کھلی چھٹی ملی ہوئی ہے جس کے باعث سرکاری نرخوں پر اشیاء کی فروخت ممکن نہیں رہتی۔ بھتہ نہ دیں تو مارکیٹ میں ٹھیلا کھڑا کرنا ممکن نہیں جبکہ مار پیٹ کا سامنا الگ ہوتا ہے۔ پولیس ان کی مدد سے قاصر ہوتی ہے۔ حقیقت تو یہ ہے کہ حکومت کو خود قیمتیں کنٹرول کرنے میں کوئی دلچسپی نہیں ہوتی اور اس کے تمام اقدامات نیم دلانہ ہی ہوتے ہیں کیونکہ منافع خوروں کی لابیوں کے ساتھ اس کے میل کھاتے سیاسی مفادات منافع خوروں کو کھلی چھوٹ دینے کے پابند ہوتے ہیں۔
رمضان المبارک کی آمد سے پہلے ہی ملک بھر میں مہنگائی میں اضافہ ہو جاتا ہے اور اشیائے خوردونوش کی قیمتیں آسمان سے باتیں کرنے لگتی ہیں ۔ اصولی طور پر رمضان المبارک کی آمد کے ساتھ اشیائے خوردنوش کی قیمتوں میں نمایاں کمی ہونی چاہئے تاکہ اس بابرکت مہینے میں غریب عوام کو ریلیف مل سکے لیکن بدقسمتی سے وطن عزیز پاکستان میں ایسا نہیں ہوتا ہے۔ بجلی، گیس اور پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کا اثر کھانے پینے کی اشیاء پر سب سے زیادہ ہوتا ہے۔ اشیائے خوردونوش کی قیمتوں میں ہوش ربا اضافے کی وجہ سے کم آمدنی اور تنخواہ دارعوام تشویش میں مبتلا ہو گئے ہیں اور ان کی نظریں نہ چاہتے ہوئے بھی حکومت کی طرف اٹھتی ہیں کہ وہ انہیں مہنگائی کے بم سے بچانے کے لئے کوئی اقدامات کرے۔
پہلا قدم تویہی ہو سکتا ہے کہ اصل منڈی میں قیمتوں پر کنٹرول کیا جائے لیکن دیکھا یہ گیا ہے کہ پرائس کمیٹیاں صرف مارکیٹوں میں چھاپے مار کر چھوٹے خوانچہ فروشوں اور پتھاریداروں کو دکھاوے کا جرمانہ کر کے اپنے فرض سے سبکدوش نظر آتی ہیں لیکن مسئلے کی جڑ کو کاٹنے سے صرف نظر کرتی ہیں۔ فریز کئے ہوئے گلے سڑے فروٹ مہنگے داموں فروخت کا کوئی نوٹس نہیں لیا جاتا۔ اب ایک ہی صورت باقی رہ جاتی ہے کہ عوام ازخود مہنگی اشیاء کا استعمال ترک کر دیں یا کم کر دیں تا کہ منافع خوروں کو قیمتیں کم کرنے پر مجبور کیا جاسکے یا عوام صارفین کمیٹیاں بنا کر بھرپور احتجاج کریں اور بے حس حکومت کو مہنگائی کم کرنے کے لئے نتیجہ خیز اقدامات پر مجبور کریں۔ ایک صورت یہ بھی ہو سکتی ہے کہ صارفین کمیٹیاں سول سوسائٹی اور میڈیا کی مدد سے عدلیہ کا سہارا لیں تا کہ عدلیہ کے احکامات صوبائی سطح پر حکومتوں کو ناجائز منافع خوری کے خلاف موثر اقدامات پر مجبور کر سکیں۔۔۔ اس دیرپا اور سنگین مسئلے کے حل کے لئے آپ بھی اپنے خیالات اور مشاہدات سے آگاہ کریں ۔۔۔! shahzad.janggroup@gmail.com
 
تبصرہ کریں     ا حباب کو بھیجئے  | تبصرے  (58)     

   تبصرہ کریں  
  آپ کا نام
  ای میل ایڈریس
شھر کا نام
ملک
  تبصرہ
کوڈ ڈالیں 
  Urdu Keyboard

راشد چوہدری، امریکا…بدقسمتي سےھم کسي اخلاقي يا سماجي ضابطے کي پابندي اپنے لئے ضروري نھيں سمجھتے ذخيرھ اندوزي اور منافع خوري اپنا حق سمجھتے ھيں ان لوگوں کو خدا کا خوف ھے نھ قانون کي پرواھ اندھيرنگري اور چوپٹ راج والا معاملھ ھےآپکے مشورے بھت موزوں ھيں بشرط کھ ان پر عمل بھي ھو ھم زندگي بھر يھ سنتے رھے کھ اسلام ايک مکمل ضابطھ حيات ھے مگر ھم نے اس ضابطے کو صرف عبادات تک محدود رکھا اور دوسري اقووام اسے زندگي کے ديگر شعبوں ميں رائج کرکے اسکي نعمتوں سے فيضياب ھوتي رھيں اب بھي وقت ھے کھ ھم اپنا قبلھ درست کر ليں ورنھ طالبان ھي ھمارا مقدد ھيں-
 
Rashid Chaudhry Posted on: Saturday, August 18, 2012

طاہر، کراچی…خدا نے اس قوم کی حالت نھیں بدلی جس کو نھ ھو خود خیال اپنی حالت کے بدلنے کا۔ جس دن اس قوم میں یھ احساس بیدار ھو جاےء گا کھ ہم پر ظلم ھو رھا ھے تو اس دن یھ قوم جاگے گی۔
 
طا ہر Posted on: Friday, August 17, 2012

Muhammad Hadim , Malaysia.........yeh ALLAH TALA ka azab hai, jab Allah Tala naraz hoga, tub tak pakistan par yeh Azab nazil hot rahega, kabi kia azaab , kabi konsa Azab, MAGAR, YAAD RAKOO, JO BI BANDA AAJ KAY IS DAUR MAI BI ALLAH AUR RASOOL KI BAAT MAAN LIA HAI US KO AJJ BI , ALLAH TALA BAY HISAB RIZIQ DAITA HAI, AUR KHUSHAAL BI HAI.
 
Muhammad Hadim Posted on: Friday, August 17, 2012

Raja, Rawalpindi.............ye sab sirf pakistan mein hi hota hai....main kuwait main rehta or job karta hoon yahan Ramdan start hoty hain har market main prices kam karny ka competition start ho jata hai or specially food stuff and fruit of all seasons ...pakaistan ka problem hai corrupt hukmran or phir un ko dekthy dekhty sab k sab log loot mar ko haq samjty hain....ALLAH hi rehem karay iss mulk pay, bus hamein to yahaan sharmindigi hoti hai.
 
Raja Posted on: Tuesday, August 14, 2012

Rashid Noor, Karachi..........iss mulk mai jitnai bhi jraim ho rahe hai specially chori or decoty ye sirf or sirf menghai ki waja sai hi ho rahe hain hakoomat ko sab sai pelha kaam jo krna tha wo menghai ko kam ya contrlo krna tha jab hi sab behatar ho sakta hai warna i am sorry is mulk ka kia bnay ga ye sirf allha ko hi pata hai.
 
Rashdi Noor Posted on: Saturday, August 11, 2012

Mohammad Sharif, India.........janab e aali mahngai sirf ek mulk ka mas,ala nahi.hamaare yahan bhi yahi hal hai.allah munafa khoron ko samajh ata kare aap ke yahan to mr.ten percent jaise log bhi hain.
 
mohd.sharif Posted on: Saturday, August 11, 2012

Anas, Qatar..........Kisi ko kuch nahi kah saktay jab Tak Zardari SAhib Bethay hain yeh sab chalta rahay ga Sab k Sab aisay hain koi kisi ka nahi sochta sab apna hi sochtay hain buss bhalay who koi bhi ho !
 
Anas Posted on: Friday, August 10, 2012

Arsalan, Karachi............bhot galat hai ye
 
arsalan Posted on: Wednesday, August 08, 2012

Farhan Baig, USA..........iss gov ne benazir ki shahadat ki waja se hukomat ki hai,sb ko pata tha k PP ki peechli hokumatain kaisi guzri hain..Dil khoon k aanso rota hai yee sb sun k,pata nahi kia hoga .
 
Farhan Baig Posted on: Wednesday, August 08, 2012

Javed Iqbal, USA.............pakistan mein har roz sadder , wazeer, kabina pase bnati he agr eak mehna rmazan mubark men tajiron nah pase bna liya to khia hova
 
javed iqbal Posted on: Monday, August 06, 2012

Mark, USA.........new york may RAMZAN MAY NON MUSLIM BHI SALE LAGATEY HEY OR HER CHEES SASTA BACHTAY HEY AMERICAN, FRANCH CHISE STORE OR INDIAN STORE KEY ALLAHWA Sb hi 20 say 30% TEK RATE GIRJATAY HEY
 
mark Posted on: Monday, August 06, 2012

محمد عثمان، گوجرانوالہ…حکومت روز مرہ استعمال کی اشیاء کی قیمتوں کو کنٹرول کرنے میں ناکام ہوگئی ہے، مہنگائی نے عوام کو جینا دوبھر کردیا ہے، ان کیلئے اپنے بچوں کی اچھی پرورش کرنا بھی مشکل ہوگیا ہے۔
 
Muhammad Usman Posted on: Monday, August 06, 2012

Rizwan Ahmed Bhutto, Naudero...........aaj kal mulk mai har cheez ka bohat bohran hai iss govt nai mulk ko barbad kar diya hai.
 
Rizwan Ahmed Bhutto Posted on: Monday, August 06, 2012

نجیب، برطانیہ…صدر زرداری اور ان کی ٹیم ملک لوٹنے میں لگی ہوئی ہے، اس مسئلے کا واحد حل یہ ہے کہ دیانت دار قیادت کا انتظار کیا جائے، اللہ پاکستان کی عوام پر رحم کرے۔ آمین
 
Najeeb Posted on: Monday, August 06, 2012

وسیم، چین…پاکستان کی عوام ذمہ دار ہے، وہ ایسے کرپٹ لوگوں کو ووٹ کیوں دیتی ہے، ہم ہمیشہ حکمرانوں کو برا بھلا کہتے ہیں لیکن ہم نے کبھی تبدیلی کیلئے اپنے ووٹ کا صحیح استعمال کیا؟
 
Waseem Posted on: Monday, August 06, 2012
Prev | 1 | 2 | 3 | 4 | Next
Page 1 of 4


اردو زبان کا نفاذ،ایک اہم قومی و آئینی ضرورت
’گو بابا گو‘ سے ’گو وٹو گو‘ تک!!
اب مستحکم فیصلے ہی پاکستانی کرکٹ کو بچاسکتے ہیں
ہاتھ دھونے کا عالمی دن
ملالہ کیلئے نوبل انعام اور سوشل میڈیا
 
قربانی سے پہلے قربانی۔۔۔۔فلم فلاپ!!!
تبصرہ کریں  تبصرے  ( 33 )
ملالہ کیلئے نوبل انعام اور سوشل میڈیا
تبصرہ کریں  تبصرے  ( 11 )
بے ترتیبی ہی اب ترتیب ہوئی جاتی ہے
تبصرہ کریں  تبصرے  ( 7 )
صوبائی اسمبلیوں کی پہلے سال کی کارکردگی
تبصرہ کریں  تبصرے  ( 5 )
ہاتھ دھونے کا عالمی دن
تبصرہ کریں  تبصرے  ( 4 )
 
 
 
 
Disclamier
 
 
Disclamier
Jang Group of Newspapers
All rights reserved. Reproduction or misrepresentation of material available on this
web site in any form is infringement of copyright and is strictly prohibited
Privacy Policy