لاگ ان
Login
 ای میل
پاس ورڈ
 
Disclamier


لاؤ ہم خود ہی نشیمن کو جلا دیتے ہیں! Share
  Posted On Tuesday, June 19, 2012
  ……سید شہزاد عالم……
پنجاب کے کئی شہروں میں بدترین لوڈ شیڈنگ کے باعث معمولات زندگی شدید متاثر ہیں۔ موسم گرما اپنے عروج پر ہے اور حکومت کی تمام تر کوتاہی، بدانتظامی ، عدم دلچسپی اور پر لے درجے کی نا اہلی کے باعث بجلی کا بحران اپنے عروج پر پہنچ گیا ہے جس کے باعث اب عوام شدید مایوسی اور اشتعال کے عالم میں سڑکوں پر حکومت کے خلاف مظاہرے کر رہے ہیں اور ملک میں رائج کلچر کے عین مطابق یہ مظاہرے پر تشدد صورت اختیار کر گئے ہیں۔ اب تک کئی قیمتی جانیں ان مظاہروں کے دوران جاں بحق ہو چکی ہیں اور کروڑوں روپے کی نجی اور سرکاری املاک نذر آتش ہو چکی ہیں۔
اس جمہوری دور میں ہم متعدد بار دیکھ چکے ہیں کہ جب بھی عوام اپنے مطالبات لئے سڑکوں پر آتی ہے مرکزی اور صوبائی حکومتیں فوراً ایک دوسرے کی مدد کو پہنچتی ہیں ۔۔ کس طرح؟۔۔۔۔ مرکز میں پی پی کی حکومت اور پنجاب میں ن لیگ کی حکومت ایک دوسرے کے خلاف بیان بازی شروع کر تے ہیں اور ایسے حالات پیدا کرتے ہیں کہ مظاہرے پر تشدد رخ اختیار کرلیں اور پھر انتظامی مشینری کو استعمال کرتے ہوئے عوام کی آواز کو دبا دیا جائے۔ مصیبت کے ماروں کے خلاف ہی مقدمے بن جائیں اور ان ہی کو زندان میں ڈال دیا جائے اور ان کی رہائی کے لئے رشوت کا بازار گرم کردیا جائے یعنی ہر صورت میں عوام کو ہی نچوڑ دیا جائے۔
بجلی کے بحران کے لئے مرکزی حکومت صوبائی حکومت کو اور صوبائی حکومت وفاق کو اس کا ذمہ دار ٹھہراکر عوام کی آنکھوں میں جی بھر کے دھول جھونکتے ہیں۔ عوام کے لئے بجلی اب کوئی اشیائے تعیش نہیں رہی بلکہ اب عوام کے معاش اور روٹی روزی کا انحصار بجلی کی فراہمی سے مشروط ہے۔ بجلی کی عدم فراہمی سے چھوٹے چھوٹے کاروبار تباہ ہو چکے ہیں ، دکانوں اور صنعتوں کو تالے لگ چکے ہیں۔ سب کچھ جانتے بوجھتے ہوئے بھی بجلی کے بحران سے نمٹنے میں حکومت کی عدم دلچسپی سے تو یہی ظاہر ہوتا ہے کہ حکومت نے ملک اور عوام کے مقدر کے لئے اندھیروں کا انتخاب کر لیا ہے ۔ ملک کی معاشی تباہی میں پہلے کون سی کسر باقی تھی کہ اب عوام کے لئے بھی مارو یا مر جاؤ والی صورت پیدا ہوتی جارہی ہے۔ بجٹ گزرے ابھی مہینہ بھی نہیں ہوا کہ بلند و بانگ دعوے ہوا میں تحلیل ہو گئے۔ عوام کو سنہرے سپنے دکھانے والے اب عوام کا گلا گھونٹنے پر لگ گئے ہیں۔ اب تو صورتحال ایسی ہو گئی ہے کہ
کیا ضرورت ہے رفیق برق کو یہ زحمت ہو
لاؤ ہم خود ہی نشیمن کو جلا دیتے ہیں


 
تبصرہ کریں     ا حباب کو بھیجئے  | تبصرے  (68)     

   تبصرہ کریں  
  آپ کا نام
  ای میل ایڈریس
شھر کا نام
ملک
  تبصرہ
کوڈ ڈالیں 
  Urdu Keyboard

Arsalan, Gujranwala..............hukumraano pakitan par raham karo or pakistan ki jan chhor do q k tum logo sey koch nahi hoga halat or b kharab hn ge.
 
arsalan Posted on: Sunday, July 22, 2012

Arsalan, Gujranwala..............hukumraano pakitan par raham karo or pakistan ki jan chhor do q k tum logo sey koch nahi hoga halat or b kharab hn ge.
 
arsalan Posted on: Sunday, July 22, 2012

Abdul Gilani, South Africa............yeh achy logon ko vote karne ka nateja hai sab log jantey the ke ye chor han phir in ko tesri dafa azmana zarori tha ab vote dia hai to hame bhugatna bi pare ga khda bhi us qaum ki halat nahi badalta na ho jsey aap apni halat badlne ka kheyaal.
 
abdul gilani Posted on: Sunday, July 22, 2012

Abdul Gilani, South Africa............yeh achy logon ko vote karne ka nateja hai sab log jantey the ke ye chor han phir in ko tesri dafa azmana zarori tha ab vote dia hai to hame bhugatna bi pare ga khda bhi us qaum ki halat nahi badalta na ho jsey aap apni halat badlne ka kheyaal.
 
abdul gilani Posted on: Sunday, July 22, 2012

Akbar, Lahore........ap sach bolte hian hum sab jante hian ke ye sab leader ghaddari ker rhy hian lakin ye awam kyon so rahe hain.
 
AKBAR Posted on: Thursday, July 19, 2012

Akbar, Lahore........ap sach bolte hian hum sab jante hian ke ye sab leader ghaddari ker rhy hian lakin ye awam kyon so rahe hain.
 
AKBAR Posted on: Thursday, July 19, 2012

Shahid, Dubai...........pak main bijli ki kami nahi hay us ko paida karney kleiye hakoomat ko khurch karna parta hey. unit ki keemat barha ker bill pahley se zeyada leye ja rahey hain aor hakoomat aiyashi kerty hey jab ke bijli paida karney per khurch nahi kiya ja raha.is ka sirf yeh hal hey keh sub log bill ada karna bund ker dain.
 
shahid Posted on: Thursday, July 19, 2012

Shahid, Dubai...........pak main bijli ki kami nahi hay us ko paida karney kleiye hakoomat ko khurch karna parta hey. unit ki keemat barha ker bill pahley se zeyada leye ja rahey hain aor hakoomat aiyashi kerty hey jab ke bijli paida karney per khurch nahi kiya ja raha.is ka sirf yeh hal hey keh sub log bill ada karna bund ker dain.
 
shahid Posted on: Thursday, July 19, 2012

Rafi Mustafa Azad, Karachi............Jab tak ham apne aap ko nahi badlein gey, dunya ki koi taqat hamari haalat sahi nahi kar sakti. Hamey apni soch badalni ho gi, un matlab parast politicians se jaan chhurani ho gi, jo sirf apna bank balance barhane me lagey huay hain.
 
Rafi Mustaf Azad Posted on: Wednesday, July 18, 2012

Rafi Mustafa Azad, Karachi............Jab tak ham apne aap ko nahi badlein gey, dunya ki koi taqat hamari haalat sahi nahi kar sakti. Hamey apni soch badalni ho gi, un matlab parast politicians se jaan chhurani ho gi, jo sirf apna bank balance barhane me lagey huay hain.
 
Rafi Mustaf Azad Posted on: Wednesday, July 18, 2012

جاوید، کراچی…جب تک عوام بے شعور رہے گی حالات ایسے ہی رہینگے۔
 
Cell 03232307831 jawaid Posted on: Tuesday, July 17, 2012

جاوید، کراچی…جب تک عوام بے شعور رہے گی حالات ایسے ہی رہینگے۔
 
Cell 03232307831 jawaid Posted on: Tuesday, July 17, 2012

راشد چوہدری، امریکا…بجلی کی عدم دستیابی بیشک بہت بڑی پریشانی ہے لیکن کیا یہ املاک کو نقصان پہنچانے سے دورہو جائیگی اور کیا لوگوں کو ایسا کرنے کی کھلی چھٹی دیدی جائے، اس طرح مسائل بڑھیں گے کم نہیں ہونگے، سابقہ ادوار میں اس مسئلے کو نظر انداز کیا جاتا رہا اور اب یہ سنگین صورت اختیار کر چکا ہے جسے حل کرنے میں وقتت لگے گا عوام کو احتجاج کا حق ہے مگر توڑ پھوڑ کا نہیں وہ اپنے حلقے کے نمائندے سے بھی رجوع کر سکتے ہیں، اگر وہ نااہل ثابت ہو تو آئندہ اسے ووٹ نہ دیں یہی آپ کے مسئلے کا حل ہے۔
 
Rashid Chaudhry Posted on: Monday, July 16, 2012

راشد چوہدری، امریکا…بجلی کی عدم دستیابی بیشک بہت بڑی پریشانی ہے لیکن کیا یہ املاک کو نقصان پہنچانے سے دورہو جائیگی اور کیا لوگوں کو ایسا کرنے کی کھلی چھٹی دیدی جائے، اس طرح مسائل بڑھیں گے کم نہیں ہونگے، سابقہ ادوار میں اس مسئلے کو نظر انداز کیا جاتا رہا اور اب یہ سنگین صورت اختیار کر چکا ہے جسے حل کرنے میں وقتت لگے گا عوام کو احتجاج کا حق ہے مگر توڑ پھوڑ کا نہیں وہ اپنے حلقے کے نمائندے سے بھی رجوع کر سکتے ہیں، اگر وہ نااہل ثابت ہو تو آئندہ اسے ووٹ نہ دیں یہی آپ کے مسئلے کا حل ہے۔
 
Rashid Chaudhry Posted on: Monday, July 16, 2012

Maqsood Ahmed, Kasur................har shakh pe ollu betha hai anjam e gulstan kia ho ga
 
maqsood ahmad Posted on: Monday, July 16, 2012
Prev | 1 | 2 | 3 | 4 | 5 | Next
Page 1 of 5


یوم باب الاسلام کے کئی اہم پہلو
کیا عدلیہ میں اردو کے نفاذ کی ضرورت نہیں ۔۔۔؟؟
تتلی کی طرح منڈلاتا محمد علی
افغانستان کو انگور اڈہ چوکی کی چپ چاپ حوالگی
ہوشیار ،،، رمضان آرہا ہے ،،،!
 
 
 
 
Disclamier
 
 
Disclamier
Jang Group of Newspapers
All rights reserved. Reproduction or misrepresentation of material available on this
web site in any form is infringement of copyright and is strictly prohibited
Privacy Policy